اگر1857کا غدر نہ ہوتا تو سرسید دنیا کے ایک بہت بڑے مورخ ہوتے: پروفیسر شان محمد

اگر1857کا غدر نہ ہوتا تو سرسید دنیا کے ایک بہت بڑے مورخ ہوتے: پروفیسر شان محمد

علی گڑھ 04 مارچ:   علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے بانی سرسید احمد خاںکے دو صد سالہ یومِ پیدائش تقریبات کے تحت’’ سرسید احمد خاں رہبرِ ملک و ملت‘‘ موضوع پر ایک سمپوزیم کا انعقاد کیاگیا۔
    ’’اگر1857کا غدر نہ ہوتا تو سرسید دنیا کے ایک بہت بڑے مورخ ہوتے نہ کہ ایک ماہرِ تعلیم۔سرسید احمد خاں کو تاریخ سے خصوصی دلچسپی تھی اور وہ چاہتے تھے کہ مسلمانوں کی تاریخ کو محفوظ کیا جائے۔ اگر ان کی تصنیف آثار الصنادید پر غور کیا جائے تو دہلی کی تمام عمارات اور تمام نقشوں کا ایسا علم ہوجاتا ہے جس کا اندازہ نہیں کیا جاسکتا۔‘‘ ان خیالات کا اظہار سراج العلوم نسواں( گرلس) کالج میں سرسید دو صد سالہ تقریبات کے سلسلہ میں منعقدہ تقریب کے دوران بحیثیت مہمانِ خصوصی خطاب کرتے ہوئے سرسید اکادمی کے سابق ڈائرکٹرپروفیسر شان محمد نے کیا۔
    انہوں نے کہا کہ سرسید احمد خاں عربی کے ساتھ ساتھ مسلمانوں کو انگریزی بھی پڑھانا چاہتے تھے اور اسی لئے انہوں نے ایک شاندار ادارہ کی بنیاد رکھی۔انہوں نے مزید کہا کہ جو قوم اپنے ماضی کو یاد نہیں رکھتی وہ ختم ہوجاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ سرسید اگر لندن نہ جاتے تو ہمیں اس شکل میں علی گڑھ نہ ملتا۔
    پروگرام کے کو آرڈینیٹر پروفیسر شکیل صمدانی نے کہا کہ سرسید جیسا خلوص دنیا میں بہت کم لوگوں میں پایا جاتا ہے اور یہ سرسید کا ہی خلوص تھا کہ1875قائم شدہ مدرسۃالعلوم مسلمانانِ ہند1920میں ایک عالیشان یونیورسٹی میں تبدیل ہوگیا جس سے صرف ہندوستان ہی نہیں بلکہ پو ری دنیا میں علم کی شمع روشن ہوئی۔انہوں نے کہا کہ سرسید نہ صرف ماہرِ تعلیم تھے بلکہ بیک وقت ادیب، مفکر، مدبر، مفسر، مورخ، ماہرِ قانون اور مصلح قوم تھے۔انہوں نے نہ صرف مسلمانوں کے لئے بلکہ سارے ہندوستانیوں کے لئے اپنی خدمات پیش کیں اور اسباب بغاوتِ ہند لکھ کر دنیا پر یہ ثابت کیا کہ غدرکے ذمہ دار ہندوستانی نہیں بلکہ انگریزوں کی غلط پالیسیاں تھیں۔انہوں نے طلبأ و طالبات کے ہجوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سرسید کے دو صد سالہ جشن میں وہ اس انداز سے شریک ہوں کہ جی جان سے خود کو تعلیم کے لئے وقف کردیں اور سرسید کے مشن کو فروغ دیں یہی سرسید کو سچا خراجِ عقیدت ہو گا۔انہوں نے کہا کہ ان تقریبات کے انعقاد کے لئے وائس چانسلر لیفٹیننٹ جنرل ضمیر الدین شاہ اور پرو وائس چانسلر برگیڈیئر سید احمد علی مبارکباد کے مستحق ہیں۔
    سبکدوش جج مسٹردھرم سنگھ نے کہا کہ سرسید کو اس وقت مسلمانوں نے غلط سمجھا اور اسی لئے ان کو کافی صعوبتیں برداشت کرنی پڑیں اور پریشانیاں ان کا مقدر بن گئیں۔سرسید کی دور اندیشی کی مثال ایم اے او کالج ہے جس نے برِ صغیر ہی نہیں بلکہ پوری دنیا کو متاثر کیا ہے۔ مسٹر دھرم سنگھ نے کہا کہ مسلم یونیورسٹی قوم و ملک کی ضرورتوں کو پورا کرنے میں ناکام ہے اس لئے اس کی مزید شاخیں ملک کے دیگر حصوں میں کھلنی چاہئیں۔
    محترمہ طلعت معصوم صاحبہ نے کہا کہ سرسید کے پیغام کو صحیح طور پر سمجھنے کی ضرورت ہے اور طلبأ و طالبات کو ان کی زندگی سے درس لیتے ہو ئے مسلسل جدوجہد کرتے رہنا چاہئے۔
    پروگرام کی صدارت کرتے ہوئے شہر مفتی مولانا خالد حمید نے کہا کہ سرسید کے احسان کو فراموش نہیں کیا جاسکتا۔ اگروہ نہ ہوتے تو ہمارے ہاتھ میں کاسۂ گدائی ہوتا۔ کالج کے نائب مینیجر محمد مسلم باری نے نظامت کے فرائض انجام دیتے ہوئے حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔
    اس موقعہ پرکالج کی پرنسپل محترمہ تسنیم عذرا، مسٹر آفتاب انجم، مسٹر محمد ظفرخاں،یونیورسٹی کے سابق طالب علم مسٹر اعظم انصاری، محمد پرویز، ندیم قریشی،کارپوریٹر ارشاد فریدی، ماسٹر جنیدصدیقی، عبداللہ صمدانی، عتیق احمد، صادقہ صدیقہ، فاطمہ جلیل، سطوت ریحانہ، شبانہ سروت، عمرانہ ضمیر، فرزانہ عنایت، رابعہ صابر،انور علی انصاری، ڈاکٹر محمد شاہد وغیرہ بھی موجود تھے۔

COMMENTS

loading...
loading...
Name

Agra Article Bareilly Current Affairs Exclusive Hadees Interview Jalsa Madarsa News muhammad-saw Muslim Story National Politics Ramadan Slider Trending Topic Urdu News Uttar Pradesh Uttrakhand World News
false
ltr
item
TIMES OF MUSLIM: اگر1857کا غدر نہ ہوتا تو سرسید دنیا کے ایک بہت بڑے مورخ ہوتے: پروفیسر شان محمد
اگر1857کا غدر نہ ہوتا تو سرسید دنیا کے ایک بہت بڑے مورخ ہوتے: پروفیسر شان محمد
اگر1857کا غدر نہ ہوتا تو سرسید دنیا کے ایک بہت بڑے مورخ ہوتے: پروفیسر شان محمد
https://1.bp.blogspot.com/-JOx0_SC_qxE/WLrpzK2sEGI/AAAAAAABL2E/fXl3xo2pJVsKIKaiYdzAA7l25eOEecWyACK4B/s640/Prof.%2BShaan%2BMohd%2Baddressing%2Bth%2Bprogramme%2Bat%2BSirajul%2BUloom%2BNiswan%2BCollege.jpg
https://1.bp.blogspot.com/-JOx0_SC_qxE/WLrpzK2sEGI/AAAAAAABL2E/fXl3xo2pJVsKIKaiYdzAA7l25eOEecWyACK4B/s72-c/Prof.%2BShaan%2BMohd%2Baddressing%2Bth%2Bprogramme%2Bat%2BSirajul%2BUloom%2BNiswan%2BCollege.jpg
TIMES OF MUSLIM
http://www.timesofmuslim.com/2017/03/1857.html
http://www.timesofmuslim.com/
http://www.timesofmuslim.com/
http://www.timesofmuslim.com/2017/03/1857.html
true
669698634209089970
UTF-8
Not found any posts VIEW ALL Readmore Reply Cancel reply Delete By Home PAGES POSTS View All RECOMMENDED FOR YOU LABEL ARCHIVE SEARCH ALL POSTS Not found any post match with your request Back Home Sunday Monday Tuesday Wednesday Thursday Friday Saturday Sun Mon Tue Wed Thu Fri Sat January February March April May June July August September October November December Jan Feb Mar Apr May Jun Jul Aug Sep Oct Nov Dec just now 1 minute ago $$1$$ minutes ago 1 hour ago $$1$$ hours ago Yesterday $$1$$ days ago $$1$$ weeks ago more than 5 weeks ago Followers Follow THIS CONTENT IS PREMIUM Please share to unlock Copy All Code Select All Code All codes were copied to your clipboard Can not copy the codes / texts, please press [CTRL]+[C] (or CMD+C with Mac) to copy