سرسید کا مقصد تعلیم کے ساتھ مذہبی روایات اور تہذیب پر توجہ مبذول کرنابھی تھا: صبیحہ سیمی شاہ

علی گڑھ۔ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے بانی سرسید احمد خاں کی دو صد سالہ تقریبات کے تحت بی بی فاطمہ ہال میں منعقدہ سمپوزیم سے خطاب کرتے ہوئے م...

علی گڑھ۔ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے بانی سرسید احمد خاں کی دو صد سالہ تقریبات کے تحت بی بی فاطمہ ہال میں منعقدہ سمپوزیم سے خطاب کرتے ہوئے مہمانِ خصوصی وائس چانسلر کی اہلیہ محترمہ صبیحہ سیمی شاہ نے کہا کہ آج کا یہ پروگرام سرسید دو صد سالہ تقریبات کے سلسلہ کی ایک کڑی ہے جس کا اختتام17؍ اکتوبر کو ہوگااور اس طرح کے پروگرام دیگر ہالوںاورفیکلٹیوں میں بھی منعقد کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سرسید کا مقصد تعلیم کے ساتھ ساتھ مذہبی روایات اور تہذیب پر بھی توجہ مبذول کرنا تھا اور اسی چیز کو ذہن میں رکھ کر انہوں نے ادارہ کو قائم کیا۔

    محترمہ صبیحہ سیمی شاہ نے کہاکہ سرسید نہ صرف تعلیم بلکہ کھیل کود اور ادبی و ثقافتی سرگرمیوں میں بھی طلبأ و طالبات کو شامل کرنا چاہتے تھے۔انہوں نے اس شاندار اور کامیاب پروگرام کے انعقاد کے لئے کو آرڈینیٹر پروفیسر شکیل صمدانی کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے طالبات سے اپیل کی کہ انہوں نے مسلم یونیورسٹی سے جو کچھ حاصل کیا ہے اس کو اور سرسید کے مشن کو دوسرے علاقوں تک پہنچائیں تاکہ وہ علاقے بھی سرسید کے مشن سے روشناس ہوسکیں۔
    انجینئرنگ فیکلٹی کے ڈین پروفیسر محمد ادریس نے کہاکہ سرسید نے جس وقت مسلمانوں کی سوچ بدلنے کا بیڑہ اٹھایا وہ دور انتہائی سخت تھا۔انہوں نے رڑکی کے ایک واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ لوگوں کی سوچ بدلنا بڑا ہی مشکل ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرسید ایک عظیم مفکر تھے اور ان کی فکر کو عوام الناس میں عام کیاجانا چاہئے۔انہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ طلبأ کی اکثریت سرسید کے افکار و نظریات سے ناواقف ہے۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ سرسید کے تعلق سے مسلم یونیورسٹی کے طلبأ اور طالبات کے لئے نصاب میں ایک پیپر داخل کیا جانا چاہئے۔
    پروگرام کے کوآرڈینیٹرپروفیسر شکیل صمدانی نے کہا کہ سرسید دو صد سالہ تقریبات کا اعلان وائس چانسلر لیفٹیننٹ جنرل ضمیر الدین شاہ( ریٹائرڈ) نے تقریباً پونے دو سال قبل کیاتھا تاکہ سرسیدکی شخصیت کے شایانِ تقریبات کا انعقاد کیا جاسکے اور اس میں وہ پوری طرح کامیاب رہے۔اس سلسلہ میں انہوں نے پرو وائس چانسلر برگیڈیئرسیداحمد علی( ریٹائرڈ) اور پروفیسر اے آر قدوائی کی کوششوں کو بھی سراہا۔انہوں نے مزید کہا کہ سرسید مشن اوئیرنیس پروگرام سے طلبأ و طالبات کو زبردست فائدہ ہو رہا ہے اور ان میں سرسید کی شخصیت کے بارے میں زبردست بیداری پیدا ہو ر ہی ہے۔انہوں نے کہا کہ سرسید نہ صرف ایک ماہرِ تعلیم تھے بلکہ مفکر، قانون داں،مورخ، مبلغ، دور اندیش اور قوم کا درد رکھنے والے عظیم شخص تھے جن کی مثال ملنا انتہائی مشکل ہے۔انہوں نے طالبات سے گذارش کی کہ وہ سرسید کی شخصیت کے بارے میں اپنی معلومات میں اضافہ کریں اور ان کے تعلیمی اور سماجی مشن کو کامیاب کریں۔
    شعبۂ انگریزی کی استانی ڈاکٹر عائشہ منیرہ نے کہا کہ سرسیدنے اگرچہ سائنس کو فروغ دینے کا کام کیا لیکن قرآن کو بھی اپنے ہاتھوں میں رکھا۔انہوں نے قوم میں سائنٹفک مزاج پیدا کرنے کے لئے انگریزی اور دوسری زبانوں کی کتابوں کا اردو میں ترجمہ کرایا اور اجتہاد پر خصوصی توجہ مبذول کی۔انہوں نے کہا کہ سرسید مسلمانوں میں تعلیمی اور سائنسی بیداری پیدا کرنے میں کامیاب رہے۔وہ مثبت فکر اور سیکولر ذہنیت کے حامل ایسے انسان تھے جو انسانیت کی بھلائی کے لئے کام کرنا چاہتے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ آپ اسلام کے زرّیں اصولوں کو لوگوں کو نہ بتائیں بلکہ زندگیوں میں اسلام کو داخل کر لیں تاکہ لوگ آپ کو دیکھ کر اسلام کی عظمت کے قائل ہوجائیں۔
    بی بی فاطمہ ہال کی پرووسٹ ڈاکٹر شہناز حسن نے مہمانان کا استقبال کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں لڑکیوں کی تعلیم پر خصوصی توجہ اور اپنی زندگی میں نئے چراغ جلانے کی کوشش کر نی چاہئے۔ 
    پروگرام کا آغاز فرحین زہرہ کی تلاوتِ کلامِ پاک سے ہوا۔ شوانی شروتریا نے نظامت کے فرائض انجام دئے۔محترمہ صبیحہ سیمی شاہ نے مختلف مقابلوں کی فاتحین کو انعامات تقسیم کئے۔ پروگرام کوکامیاب بنانے میں ڈاکٹر رائینہ رضا، ڈاکٹر سرتاج تیاگی، سینئر ہال رفیدہ صدیقی، لٹریری سکریٹری کیرتی اگروال، مسز انجم تسنیم،اومامہ خورشید، سینئر کلچرل سکریٹری گننجن جین، عبدالخالق کامل ندوی، شریار عالم اور عبداللہ صمدانی کا خصوصی تعاون رہا۔

COMMENTS

loading...
loading...
Name

Agra Article Bareilly Current Affairs Exclusive Hadees Interview Jalsa Madarsa News muhammad-saw Muslim Story National Politics Ramadan Slider Trending Topic Urdu News Uttar Pradesh Uttrakhand World News
false
ltr
item
TIMES OF MUSLIM: سرسید کا مقصد تعلیم کے ساتھ مذہبی روایات اور تہذیب پر توجہ مبذول کرنابھی تھا: صبیحہ سیمی شاہ
سرسید کا مقصد تعلیم کے ساتھ مذہبی روایات اور تہذیب پر توجہ مبذول کرنابھی تھا: صبیحہ سیمی شاہ
https://1.bp.blogspot.com/-K-eGmc762Bs/WNaF5oIWVaI/AAAAAAABPZo/LLofn4eOFtQw8znnr4rCd6SuqNeN8AsYQCK4B/s640/Mrs.%2BSabiha%2BSimi%2BShah%2Bbeing%2Bfelicitated%2Bat%2BBibi%2BFatima%2BHall%2Bof%2Bresidence%2Bfor%2Bgirls.JPG
https://1.bp.blogspot.com/-K-eGmc762Bs/WNaF5oIWVaI/AAAAAAABPZo/LLofn4eOFtQw8znnr4rCd6SuqNeN8AsYQCK4B/s72-c/Mrs.%2BSabiha%2BSimi%2BShah%2Bbeing%2Bfelicitated%2Bat%2BBibi%2BFatima%2BHall%2Bof%2Bresidence%2Bfor%2Bgirls.JPG
TIMES OF MUSLIM
http://www.timesofmuslim.com/2017/03/sir-syed-bi-centenary-celebration.html
http://www.timesofmuslim.com/
http://www.timesofmuslim.com/
http://www.timesofmuslim.com/2017/03/sir-syed-bi-centenary-celebration.html
true
669698634209089970
UTF-8
Not found any posts VIEW ALL Readmore Reply Cancel reply Delete By Home PAGES POSTS View All RECOMMENDED FOR YOU LABEL ARCHIVE SEARCH ALL POSTS Not found any post match with your request Back Home Sunday Monday Tuesday Wednesday Thursday Friday Saturday Sun Mon Tue Wed Thu Fri Sat January February March April May June July August September October November December Jan Feb Mar Apr May Jun Jul Aug Sep Oct Nov Dec just now 1 minute ago $$1$$ minutes ago 1 hour ago $$1$$ hours ago Yesterday $$1$$ days ago $$1$$ weeks ago more than 5 weeks ago Followers Follow THIS CONTENT IS PREMIUM Please share to unlock Copy All Code Select All Code All codes were copied to your clipboard Can not copy the codes / texts, please press [CTRL]+[C] (or CMD+C with Mac) to copy