وادی رضا کی کوہ ہمالہ رضا کا ہے جس سمت دیکھیے وہ علاقہ رضا کا ہے اگلوں نے تو لکھا ہے بہت علم دین پر جو کچھ ہے اس صدی میں وہ تنہاں رضا کا ہے

*اعلیٰ حضرت کی ذہانت تاریخ کے آئینے میں* * ولادت 1856*                          *وفات 1921* 10 شوال المکرم بروز شنبہ...




*اعلیٰ حضرت کی ذہانت تاریخ کے آئینے میں*

* ولادت 1856*                          *وفات 1921*

10 شوال المکرم بروز شنبہ 1272ھ کو اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان فاضل بریلوی نے عرصہ دنیا میں قدم مبارک رکھا اور ہندوستان کے علاقہ روہیلکھنڈ بریلی شریف میں پیدا ہوئے.
* آپکا پورا اسم مبارک عبدالمصطفی
احمد رضا خاں ہے*.
آپکا سلسلہ نسب کچھ اس طرح ہیں
حضرت عبدالمصطفی امام احمد رضا خاں  ابن حضرت مولانا نقی علی خاں بن حضرت مولانا رضا علی خاں بن حضرت مولانا حافظ محمد کاظم علی خاں بن حضرت مولانا شاہ محمد اعظم خاں بن حضرت محمد سعادت یار خاں بن حضرت محمد سعید الله خاں رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہم اجمعین.
اعلیٰ حضرت کے آباو اجداد قندھار کے موقر قبیلہ بڑھیچ کے پٹھان تھے شاہان مغلیہ کے دور میں وہ لاہور آئے اور معزز عہدوں پر فائز ہوئے. حضرت محمد سعادت یار خاں صاحب منجانب سلطنت ایک مہم سر کرنے کے لئے بریلی روہیلکھنڈ آئے اور فتحیابی حاصل کرنے کے بعد وہیں مقیم ہو گئے. اس طرح سے اعلیٰ حضرت کے آباء و اجداد قندھار سے بریلی شریف تشریف لاءے.
اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان فاضل بریلوی کی ولادت کے بعد آپکے والد ماجد حضرت مولانا نقی علی خاں نے حسب معمول عقیقہ فرمایا اور عقیقے کے روز آپ نے ایک خواب خوشگوار دیکھا کہ جس کی تعبیر یہ تھی*" کہ یہ فرزند فاضل عارف ہوگا"*
اور ایسا ہی ہوا
اللہ تعالیٰ نے آپ کو اپنے دین مبین اور ناموس رسالت کے تحفظ کے لئے چن لیا تھا. آپ بچپن سے ہی بے پناہ ذہین  فہم و ادراک کے مالک تھے.
اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان فاضل بریلوی کی اساتذہ کی تعداد بہت مختصر ہے
جیسے
1-وہ اساتذہ کرام جنہوں نے شروعاتی کتابیں پڑھائیں
2-جناب مرزا غلام قادر بیگ صاحب بریلوی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ.
3-جناب مولانا عبد العلی صاحب رامپوری رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ.
4- خاندان برکاتیہ سید شاہ ابو الحسین احمد نوری قدس سرہ العزیز.
5-پیرو مرشد قدس سرہ العزیز.
6-اور آپکے والد ماجد مولانا نقی علی خان بریلوی.
یہ وہ خوش نصیب حضرات جنکی قسمت پر عاشقین اعلیٰ حضرت آج بھی رشک کرتے ہیں.
*امام اہلسنت الشاہ امام احمد رضا خان فاضل بریلوی کی ذہانت کا یہ عالم تھا کہ چار سال کی کم عمر میں قرآن مجید کا ناظرہ مکمل کیا اور چھ سال کی عمر میں ماہ ربیع الاول شریف میں ممبر پر بہت بڑے مجمع میں میلاد شریف پڑھا اور سب کو حیرت زدہ کردیا*.
اعلیٰ حضرت خود فرماتے تھے کہ میرے استاد جن سے میں ابتدائی کتاب پڑھتا تھا جب وہ مجھے سبق پڑھادیا کرتے تو میں ایک دو مرتبہ پڑھ کر یاد کرلیتا اور جب مجھ سے سبق سنتے تو حرف بحرف لفظ بہ لفظ سنا دیتا.
استاد روزانہ کا یہ معمول دیکھ کر سخت تعجب کرتے. ایک دن مجھ سے کہنے لگے کہ
*"احمد میاں*"
*یہ بتاءو تم آدمی ہو یا جن یا فرشتہ کہ مجھکو پڑھانے میں دیر لگتی ہے مگر تم کو یاد کرنے میں دیر نہیں لگتی*.
جناب سید ایوب علی رضوی بیان کرتے ہیں کہ ایک روز حضور اعلیٰ حضرت نے ارشاد فرمایا کہ بعض نا واقف لوگ میرے نام کے آگے حافظ لکھ دیا کرتے تھے حالانکہ کہ میں اس لقب کا اہل نہیں تھا. ہاں اتنا ضرور ہے کہ آگر کوئی حافظ صاحب مجھے ایک رکوع سنادیں تو دوسری بار میں اسکو زبانی یاد کر لیا کرتا اور سنا دیتا.
اور ایسا ہی ہوا کہ آپنے بالترتیب بکوشش ایک ماہ میں قرآن پاک کو مکمل حفظ کر لیا اور یہ اس لئے کہ ان بندگان خدا کا کہنا غلط نہ ثابت ہو. یہ آپکی ذہانت اور آپ پر اللہ تعالیٰ کا کرم خاص تھا.
تمام علوم درسیہ معقول و منقول سب اپنے والد ماجد مولانا نقی علی خاں صاحب سے حاصل کر کے ماہ شعبان میں 1286ھ کو فاتحہ فراغ کیا اور اسی دن ایک رضاعت کا مسئلہ لکھ کر والد ماجد صاحب کی خدمت میں پیش کیا جواب بالکل صحیح تھا. والد ماجد نے اپنے لخت عزیز امام احمد رضا خان کی ذہانت کو دیکھ کر اسی دن سے فتویٰ نویسی کا کام ان کے سپرد کر فرمایا.
*میرے سرکار اعلیٰ حضرت کوپچاس سے زائد علم و فن پر مکمل دسترس حاصل تھی*.
جیسے علم حدیث، علم تفسیر، علم فقہ وغیرہ وغیرہ
سرکار اعلیٰ حضرت نےجمادی الاول 1294ھ میں سرکار مارہرہ مطہرہ میں حضرت خاتم الاکابر عالی جناب حضرت سید شاہ آل رسول احمدی قدس سرہ العزیز کی خدمت میں حاضر ہو کر بیعت ہوئے اور مثال خلافت و اجازت جمیع سلاسل و سند حدیث سے مشرف ہوئے.
اور 1296ھ کو آپکے پیرو مرشد کا وصال ہو گیا
اعلیٰ حضرت  اپنے پیرو مرشد اور خانقاہ مارہرہ کے تعلق سے فرماتے ہیں

ایسے آقاؤں کا بندہ ہوں رضا
بول بالے مری سرکاروں کے ہیں.

سب سے اہم بات یہ ہے کہ اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان فاضل بریلوی نے جو تعلیم بظاہر عربی اردو مکتب و مدرسے میں حاصل کی  بس وہی تعلیم سے آپنے پوری دنیا میں علم و فن کا لوہا منوایا. انہوں نے کالج اور یونیورسٹی سے کوئی تعلیم حاصل نہیں کی.
اسکے باوجود آپکے علم کا یہ عالم تھا یہ
انہیں اساتذۂ کرام سے فیض یاب ہو کر پوری دنیا کے اندر یکتائے روزگار نظر آئے .
کمال یہ ہے کہ آپنے علم دین کے ساتھ ساتھ دنیاوی علوم و فنون میں بھی آپ لا زوال ہیں.
علم سائینس، علم تکسیر، علم معاشیات،علم حیاتیات، علم نباتیات، علم جغرافیہ، علم تاریخ  ، یا علم ریاضی  وغیرہ وغیرہ
آپ ہر میدان کے شہسوار نظر آتے ہیں.
اردو ادب میں خصوصی صنف نعت گوئی میں کوئی آپکے عروج کمال تک نہیں پہنچا
آپ نے ایک شعر چار زبانوں کا استعمال کتنے خوبصورت انداز میں کیا ہے..

لم یات نظیر ک فی نظر مثل تو نہ شد پیدا جانا
جگ راج کو تاج تورے سر سو ہے تجھکو شہ دوسرا جانا.
ایسی مثال ہمیں شاعری میں دیکھنے کو نہیں ملتی
آپکے علم و فن اور کمالات سے غیر بھی محظوظ ہوتے نظر آتے ہیں.
اور یہ بات ہم نے نہیں کہتے کوئی مسلک اعلیٰ حضرت کا پیروکار نہیں کہتا بلکہ اس کا اعتراف دنیا کے نامور شخصیات نے کیا ہے.
دنیا کے عظیم اسکالرس نے کیا ہے.
دنیا کے بڑے بڑے سائنسدانوں کیا ہے
دنیا کی عظیم ترین یونیورسٹیوں نے کیا ہے،
میں یہاں صرف اتنا ہی ذکر کروں گا. کہ ہندوستان کی مشہور و معروف یونیورسٹی اور عصری تعلیم کا مرکز علی گڑھ مسلم یونیورسٹی علی گڑھ کے وائس چانسلر کے حوالے سے مولوی محمد حسین بریلوی ثم میرٹھی کا بیان ہے کہ مسلم یونیورسٹی علی گڑھ کے وائس چانسلر جنہوں نے ہندوستان کے علاوہ غیر ممالک میں تعلیم حاصل کی اور ریاضی (میتھ) میں کمال حاصل کیا تھا. ہندوستان میں کافی شہرت یافتہ تھے. ان کو ریاضی کے مسئلے پر اشتباہ ہوا چند کوششوں کے بعد بھی مسئلہ حل نہیں ہوا. تو انہوں نے قصد کیا کہ جرمنی جا کر اس کو حل کیا جائے. حسن اتفاق سے جناب مولانا سید سلیمان اشرف بہاری، پروفیسر شعبہ دینیات علی گڑھ مسلم یونیورسٹی علی گڑھ سے اس کا ذکر کیا انہوں نے کہا کہ آپ بریلی جاکر وقت کے امام، امام اعظم اعلیٰ حضرت فاضل بریلوی سے دریافت کیجئے وہ ضرور حل کر دینگے.
اس پر واءس چانسلر نے مسکراتے ہوئے کہا کہ میں نے ہندوستان کے علاوہ بیرونی ممالک میں تعلیم پاکر آیا ہوں پھر بھی مسئلہ حل نہیں کر سکا اور آپ ان صاحب کا نام بتا رہے ہیں کہ جنہوں نے اسکول اور کالج کی شکل بھی نہیں دیکھی تو وہ بھلا کیا بتاسکتے ہیں. کچھ دنوں کے بعد مولانا نے واءس چانسلر صاحب کو پریشان دیکھ کر پھر وہی مشورہ دیا کہ جب آپ جرمنی جا رہے ہیں تو اس سے قبل بریلی جا کر دیکھ لیجیے لیکن انہوں نے بات ماننے سے انکار کر دیا اور کہا
" کہ مولانا عقل بھی کوئی چیز ہے! آپ مجھکو بار بار وہی رائے دے رہے ہیں"
اس پر مولانا نے نے فرمایا!
آخر اس میں حرج کیا ہے ولایت کے سفر کے مقابلے بریلی کا سفر تو مشکل نہیں آپ ایک بار ملاقات تو کریں.
اب مولانا کی یہ بات چانسلر صاحب نے مان لی اور مولانا کو لیکر مارہرہ پہنچے اور وہاں سے سید مہدی حسن میاں صاحب سجادہ نشین مارہرہ کے ہمراہ بریلی شریف پہنچ گئے. سید مہدی میاں صاحب نے اعلیٰ حضرت کی جناب میں پیغام بھیجا کہا بتادو کہ مارہرہ سے سید مہدی حسن آئیں ہیں اور ان کے ساتھ احباب بھی ہیں. اور آپ کی عیادت کرنا چاہتے ہیں. اس وقت اعلیٰ حضرت کی طبیعت نا ساز چل رہی تھی جب آپ نے مارہرہ کا نام سنا تو فوراً اندر آنے کے لئے کہا جیسے ہی سجادہ نشین سید مہدی حسن میاں اعلیٰ حضرت کے پاس آئے آپ نے انکی عزت شایان شان فرمائی.
ساتھ ہی سید مولانا سلیمان اشرف اور وائس چانسلر سے خیرو عافیت دریافت کی.
اسکے بعد واءس چانسلر صاحب نے کہا کہ میں آپ سے ریاضی کا ایک مسئلہ دریافت کرنے کے لئے آپ کے حضور حاضر ہوا ہوں. اعلٰی حضرت فاضل بریلوی نے کہا کہ فرمائیں تو انہوں نے کہا کہ یہ مسئلہ کچھ زیادہ پیچیدہ ہے اتنی جلدی بتانا مناسب نہیں ہے سکون و اطمینان کے ساتھ بتایا جا سکتا ہے.
اعلیٰ حضرت نے کہا کہ آپ سوال معلوم کیجئے گا انشاءاللہ جواب دیا جائے گا.
اس پر وائس چانسلر نے سوال پیش کر دیا اعلیٰ حضرت نے سنتے ہی فرمایا اس کا جواب یہ ہے،
یہ سن کر ان حیرت ہو گئی اور آنکھوں سے پردہ آٹھ گیا.
بے اختیار بول اٹھے.
" کہ میں نے صرف سنا تھا کہ علم لدنی کوئی شے ہے مگر آج آنکھ سے دیکھ بھی لیا. مجھے جواب سن کر ایسا معلوم ہو رہا ہے، گویا جناب اس مسئلے کو کتاب میں دیکھ رہے تھے کہ سوال سنتے ہی فی البدیہہ تشفی بخش نہایت اطمینان کا جواب عنایت فرمایا"
کچھ عرصے کے بعد جب ایک صاحب کی ملاقات واءس چانسلر صاحب سے شملہ میں ہوئی تو انہوں نے چانسلر صاحب سے معلوم کیا کہ آپ ایک مرتبہ بریلی شریف امام عشق و محبت کے پاس ریاضی کا ایک اہم مسئلہ معلوم کرنے گئے تھے تو آپ نے اعلیٰ حضرت کو کیسا پایا.
" اس پر وائس چانسلر نے کہا کہ اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان فاضل بریلوی کو بہت ہی ملنسار، خلیق، منکسرالمزاج پایا اور ریاضی بہت اچھی خاصی جانتے تھے با وجود اس کے انہوں نے کسی سے پڑھا نہیں انکو علم لدنی تھا. میرا سوال بہت مشکل تھا اس کے باوجود ایسا فی البدیہہ جواب دیا گویا اس مسئلے پر عرصے سے ریسرچ کیا ہو".
یہ تھی اعلیٰ حضرت کی ذہانت.

ملک سخن کے شاہی تم کو رضا مسلم
جس سمت آ گئے ہو سکے بٹھا دیے ہیں


محمد ارشد خان رضوی فیروزآبادی
شعبہ اردو سینٹ جانس کالج آگرہ
مکان نمبر 41، گلی نمبر 8 ،
کشمیری گیٹ فیروزآباد 283203
یو. پی. انڈیا 9259589974 

COMMENTS

loading...
Name

Agra Article Bareilly Current Affairs Exclusive Hadees Hindi International Hindi National Hindi News Hindi Uttar Pradesh Home Interview Jalsa Madarsa News muhammad-saw Muslim Story National Politics Ramadan Slider Trending Topic Urdu News Uttar Pradesh Uttrakhand World News
false
ltr
item
TIMES OF MUSLIM: وادی رضا کی کوہ ہمالہ رضا کا ہے جس سمت دیکھیے وہ علاقہ رضا کا ہے اگلوں نے تو لکھا ہے بہت علم دین پر جو کچھ ہے اس صدی میں وہ تنہاں رضا کا ہے
وادی رضا کی کوہ ہمالہ رضا کا ہے جس سمت دیکھیے وہ علاقہ رضا کا ہے اگلوں نے تو لکھا ہے بہت علم دین پر جو کچھ ہے اس صدی میں وہ تنہاں رضا کا ہے
https://1.bp.blogspot.com/-ddAAc1NoAlI/XtY8_Vv91YI/AAAAAAAAhSw/7_liKH0ykbIcLpzcHoKPyvk3RlS0XmJ8QCLcBGAsYHQ/s640/download%2B%25282%2529.jpg
https://1.bp.blogspot.com/-ddAAc1NoAlI/XtY8_Vv91YI/AAAAAAAAhSw/7_liKH0ykbIcLpzcHoKPyvk3RlS0XmJ8QCLcBGAsYHQ/s72-c/download%2B%25282%2529.jpg
TIMES OF MUSLIM
http://www.timesofmuslim.com/2020/06/blog-post_83.html
http://www.timesofmuslim.com/
http://www.timesofmuslim.com/
http://www.timesofmuslim.com/2020/06/blog-post_83.html
true
669698634209089970
UTF-8
Not found any posts VIEW ALL Readmore Reply Cancel reply Delete By Home PAGES POSTS View All RECOMMENDED FOR YOU LABEL ARCHIVE SEARCH ALL POSTS Not found any post match with your request Back Home Sunday Monday Tuesday Wednesday Thursday Friday Saturday Sun Mon Tue Wed Thu Fri Sat January February March April May June July August September October November December Jan Feb Mar Apr May Jun Jul Aug Sep Oct Nov Dec just now 1 minute ago $$1$$ minutes ago 1 hour ago $$1$$ hours ago Yesterday $$1$$ days ago $$1$$ weeks ago more than 5 weeks ago Followers Follow THIS CONTENT IS PREMIUM Please share to unlock Copy All Code Select All Code All codes were copied to your clipboard Can not copy the codes / texts, please press [CTRL]+[C] (or CMD+C with Mac) to copy