’بحران سے نپٹنے میں ایمان و عقیدہ روحانی غذا فراہم کرتا ہے‘

 دارا شکوہ مرکز تفاہم بین المذاہب و ڈائیلاگ کے زیر اہتمام دو روزہ بین الاقوامی ویبینار کا اختتام علی گڑھ، 30/ستمبر: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (...

 دارا شکوہ مرکز تفاہم بین المذاہب و ڈائیلاگ کے زیر اہتمام دو روزہ بین الاقوامی ویبینار کا اختتام

علی گڑھ، 30/ستمبر: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے دارا شکوہ مرکز تفاہم بین المذاہب و ڈائیلاگ کی جانب سے منعقدہ دوروزہ بین الاقوامی ویبینار بعنوان ”بحران کا سامنا کرنے میں ع


قید ہ کا کردار: کووِڈ کے بعد کی دنیا کے لئے مذہب کی افادیت“ کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی آیۃ اللہ مہدوی پور (ایران) نے کہاکہ کووِڈ 19 کی وبا کے خاتمہ اور سائنسدانوں اور اطباء کے اندر اس وبا سے مقابلہ کی ہمت و طاقت پیدا کرنے کے لئے مختلف مذاہب کے پیروکاروں نے دعائیں کی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اس وبا نے انسانوں کی دماغی و نفسیاتی صحت پر برے اثرات مرتب کئے ہیں، تاہم اس بحرانی وقت میں مذہب و روحانیت امید کی کرن ثابت ہوئے ہیں۔ 

پرو وائس چانسلر پروفیسر ظہیر الدین نے اپنے صدارتی خطاب میں کہاکہ وبائی دور میں بے شک مختلف قسم کے دماغی صحت کے مسائل سامنے آئے ہیں۔ مذہب و ایمان نے ان مشکل حالات میں لوگوں کے اندر امید پیدا کی ہے اور انھیں مصائب سے نبردآزما ہونے کا حوصلہ دیا ہے۔ 

پروفیسر معراج الدین (وائس چانسلر، سنٹرل یونیورسٹی آف کشمیر) نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ کہ انسانیت کی بھلائی اور کرّہئ ارض کے باسیوں کے بہتر مستقبل کے لئے ایمان و عقیدہ کی طاقت کا مثبت استعمال ہونا چاہئے۔

اس سے قبل ویبینار کے دوسرے سیشن سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر ظفر محمود (بانی، زکاۃ فاؤنڈیشن) نے کہاکہ مادّیت کی لالچ نے انسان کا سکون چھین لیا ہے اور دولت و منصب کی چاہ نے انسانیت کا جذبہ کمزور کردیا ہے۔ آج ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم دوسروں کی تئیں اپنی ذمہ داری کو محسوس کریں۔ کووِڈ 19 کی وبا نے ہمیں آگاہ کیا ہے کہ موت زندگی کی اٹل سچائی ہے اس لئے رحم و فیاضی کا جذبہ واپس لائیں اور زندگی میں آسودہ خاطر رہنا بھی سیکھیں۔ 

قانون کے استاد پروفیسر ایس ڈی شرما نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ قرآن اور بھگوت گیتا نے انسانوں کی مدد کی تلقین کی ہے اور انصاف کے تصور پر زور دیا ہے۔ انھوں نے قانونی پہلو سے حقوق اور ذمہ داریوں پر گفتگو کی۔ 

درگاہ اجمیر شریف کے گدی نشیں حاجی سید سلمان چشتی نے کہاکہ انسانی زندگی میں مذہب کا بہت اہم رول ہے۔ انھوں نے خواجہ معین الدین چشتی کی تعلیمات کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ ہمارے اندر سورج کی طرح روشنی، ندی کی طرح سخاوت اور زمین کی طرح عاجزی و انکساری ہونی چاہئے۔ صبر اور شکر دو ایسے جذبات ہیں جو انسان کو کسی بھی بحران سے نکلنے میں معاون ہوتے ہیں۔ 

ڈاکٹر شیخ عقیل احمد (ڈائرکٹر، این سی پی یو ایل) نے اے ایم یو وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور کو دارا شکوہ مرکز تفاہم بین المذاہب و ڈائیلاگ کے قیام کے لئے مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہاکہ کثرت میں وحدت ہندوستان کی شناخت ہے۔ یہ ملک صوفیوں اور سنتوں کا مرکز رہا ہے جنھوں نے سماج میں محبت و بھائی چارہ کا پیغام عام کیا۔ اس جذبہ کو زندہ کرنے کی ضرورت ہے۔ 

مسٹر رامش صدیقی نے کہاکہ قرآن کریم کے مطابق یہ دنیا ایک امتحان گاہ ہے۔ بحران امیر و غریب اور مذہب کے درمیان فرق نہیں کرتا۔ اسلام کے مطابق ناامیدی کفر ہے اور بحران انسان کے اندر خدا کا شکر ادا کرنے کا جذبہ پیدا کرتا ہے۔ 

پروفیسر راجویر شرما (دہلی یونیورسٹی) نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ اعتماد اور یقین، ایمان و اعتقاد کا حصہ ہے جس کا مفہوم یہ ہے کہ خدا ہر وقت ہمارے ساتھ ہے اور ہمارا مددگار ہے۔ انھوں نے کہاکہ بحران و آزمائش کے وقت یہی اعتماد و یقین انسان کے کام آتا ہے اور اسے حوصلہ بخشتا ہے۔ 

پروفیسر اقبال علی خاں نے اپنے صدارتی خطاب میں کہاکہ اگر اسلام اور دیگر مذاہب کی تعلیمات پر ہم سچائی سے عمل کریں تو وبائی بحران سے نکلنے میں آسانی ہوگی۔ 

ڈاکٹر محمد ناصر نے پروگرام کے انعقاد کے لئے منتظمین کو مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ یہ ویبینار آج کے بحرانی وقت میں بہت معنویت رکھتا ہے۔ 

پروفیسر ایم شکیل احمد صمدانی، پروفیسر توقیر عالم فلاحی اور مسٹر اوسمنڈ چارلس نے بھی اپنے خیالات ظاہر کئے۔ سرسید اکیڈمی کے ڈائرکٹر ڈاکٹر محمد شاہد نے سیشن کی تلخیص پیش کی جب کہ دارا شکوہ مرکز تفاہم بین المذاہب و ڈائیلاگ کے ڈائرکٹر پروفیسر علی محمد نقوی نے اظہار تشکر کیا۔ 

اس ویبینار میں ملک و بیرون ملک سے 32/مقالے پیش کئے گئے۔ 

COMMENTS

loading...
Name

Agra Article Bareilly Current Affairs Exclusive Hadees Hindi International Hindi National Hindi News Hindi Uttar Pradesh Home Interview Jalsa Madarsa News muhammad-saw Muslim Story National Politics Ramadan Slider Trending Topic Urdu News Uttar Pradesh Uttrakhand World News
false
ltr
item
TIMES OF MUSLIM: ’بحران سے نپٹنے میں ایمان و عقیدہ روحانی غذا فراہم کرتا ہے‘
’بحران سے نپٹنے میں ایمان و عقیدہ روحانی غذا فراہم کرتا ہے‘
https://1.bp.blogspot.com/-Yr9UftPx6dA/X3SWpQKQVdI/AAAAAAAAkpc/I2W8SRR2tSABfJLol67gLb9-kfO6WOURgCLcBGAsYHQ/s320/Veledictory%2Bsession%2Bof%2BDara%2BShikoh%2BCentre%2Bconference.jpg
https://1.bp.blogspot.com/-Yr9UftPx6dA/X3SWpQKQVdI/AAAAAAAAkpc/I2W8SRR2tSABfJLol67gLb9-kfO6WOURgCLcBGAsYHQ/s72-c/Veledictory%2Bsession%2Bof%2BDara%2BShikoh%2BCentre%2Bconference.jpg
TIMES OF MUSLIM
http://www.timesofmuslim.com/2020/09/blog-post_142.html
http://www.timesofmuslim.com/
http://www.timesofmuslim.com/
http://www.timesofmuslim.com/2020/09/blog-post_142.html
true
669698634209089970
UTF-8
Not found any posts VIEW ALL Readmore Reply Cancel reply Delete By Home PAGES POSTS View All RECOMMENDED FOR YOU LABEL ARCHIVE SEARCH ALL POSTS Not found any post match with your request Back Home Sunday Monday Tuesday Wednesday Thursday Friday Saturday Sun Mon Tue Wed Thu Fri Sat January February March April May June July August September October November December Jan Feb Mar Apr May Jun Jul Aug Sep Oct Nov Dec just now 1 minute ago $$1$$ minutes ago 1 hour ago $$1$$ hours ago Yesterday $$1$$ days ago $$1$$ weeks ago more than 5 weeks ago Followers Follow THIS CONTENT IS PREMIUM Please share to unlock Copy All Code Select All Code All codes were copied to your clipboard Can not copy the codes / texts, please press [CTRL]+[C] (or CMD+C with Mac) to copy